جنوبی کوریا اور امریکہ کا فوجی مشقوں کو ختم کرنے کا اعلان

جنوبی کوریا اور امریکہ نے شمالی کوریا کا اعتماد حاصل کرنے کیلئے فول ایگل کے نام اپنی سالانہ فوجی مشقوں کو ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ جنوبی کوریا اور امریکہ نے شمالی کوریا کا اعتماد حاصل کرنے کیلئے فول ایگل کے نام اپنی سالانہ فوجی مشقوں کو ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

پینٹاگون کے بیان کے مطابق جنوبی کوریا کے وزیر دفاع جیونگ کیونگ اور ان کے امریکی ہم منصب پیٹرک شناہان کے درمیان ٹیلی فونک بات چیت ہوئی، جس میں دونوں نے کلیدی کردار ادا کرنے اور مشقوں کے سلسلے فول ایگل کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا۔ سیئول کی وزارت دفاع کا کہنا تھا کہ یہ فیصلہ شمالی کوریا کے جوہری عدم پھیلاؤ کے لیے جاری سفارتی کوششوں کی حمایت کرنا اور شمالی کوریا کے ساتھ ہی عسکری کشیدگی کو کم کرنا ہے۔ مشترکہ بیان میں اعلان کیا گیا کہ اس کے بجائے ’نظرثانی شدہ‘ مشقوں کو پیر (آج) سے شروع کیا جائے گا اور یہ 12 مارچ تک ہوں گی۔ جنوبی کوریا کے فوجی حکام کا کہنا تھا کہ 9 روز کی اس مشق کا نام باضابطہ طور پر ’ڈونگ مائنگ‘ یا ’اتحاد‘ رکھا گیا ہے اور اس کا اصل مقصد مشترکہ دفاعی مشق پر توجہ مرکوز کرنا ہے۔

واضح رہے کہ فول ایگل، اتحادیوں کی جانب سے منعقد ہونے والی مشترکہ مشقوں میں سب سے بڑی ہیں، ماضی میں اس میں 2 لاکھ جنوبی کورین فورسز اور تقریباً 30 ہزار امریکی اہلکار شامل ہوتے تھے۔

News Code 1888570

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 6 =