نیتن یاہو کا وزارت عظمی کے عہدے سے مستعفی ہونے سے انکار

اسرائیل کے وزير اعظم نیتن یاہو نے مالی بدعنوانیوں کے الزامات کے باوجود وزارت عظمی کے عہدے کو چھوڑنے سے انکار کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اسپوٹنک کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسرائیل کے وزير اعظم نیتن یاہو نے مالی بدعنوانیوں کے الزامات کے باوجود وزارت عظمی کے عہدے کو چھوڑنے سے انکار کردیا ہے۔

 اسرائیلی وزیر اعظم نے اس سے قبل اعلان کیا تھا کہ وہ 2019 کے انتخابات میں الیکشن لڑیں گے اور الیکشن میں کامیاب ہوکر ایک بار پھر اسرائیل کے وزیر اعظم بنیں گے۔

ادھر اسرائیل کے اٹارنی جنرل کا کہنا ہے کہ نیتن یاہو پر رشوت خوری، فریب دہی اور مالی بد عنوانی کے تین الزامات ہیں جن سے ظاہر ہوتا ہے کہ  اسرائیلی وزیر اعظم نے اپنے عہدے کا ناجائزہ فائدہ اٹھایا ہے۔ نیتن یاہو کا کہنا ہے کہ اسے قربانی کا بکرا بنایا جارہا ہے تاکہ وہ چوتھی بار اسرہائیل کے وزير اعظم نہ بن سکیں۔

News Code 1888497

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 11 =