طالبان کا جنگ بندی کے لئے انتخابات سے قبل عبوری حکومت کی تشکیل اور اس کی صدارت کا مطالبہ

امریکی نمائندے نے افغان طالبان کے ساتھ ہونے والے مذاکرات میں مطالبہ کیا ہے کہ افغانستان میں امن کے قیام کیلیے طالبان آئندہ 6 ماہ کیلیے جنگ بندی یقینی بنائیں اور آئندہ اتحادی حکومت کا فعال حصہ بنیں جبکہ طالبان نے مطالبہ کیا ہے کہ امریکہ بھی طالبان کے تمام گرفتار قیدیوں کو رہا کرے اور آئندہ 6 ماہ تک کابل حکومت طالبان کے حوالے کرے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے طلوع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی نمائندے  نے افغان طالبان کے ساتھ ہونے والے مذاکرات میں مطالبہ کیا ہے کہ افغانستان میں امن کے قیام کیلیے طالبان آئندہ 6 ماہ کیلیے جنگ بندی یقینی بنائیں اور آئندہ اتحادی حکومت کا فعال حصہ بنیں جبکہ طالبان نے مطالبہ کیا ہے کہ امریکہ بھی طالبان کے تمام گرفتار قیدیوں کو رہا کرے اور آئندہ 6 ماہ تک کابل حکومت طالبان کے حوالے کرے۔ اطلاعات کے مطابق امریکہ نے افغان طالبان سے مطالبہ کیا ہے کہ افغانستان میں قیام امن کیلیے آئندہ 6ماہ کیلیے جنگ بندی یقینی بنائی جائے اورآئندہ سال تشکیل پانے والی نئی حکومت کا بھی حصہ بنیں۔

طالبان نے مطالبہ کیا ہے کہ امریکہ بھی طالبان کے تمام گرفتار قیدیوں کو رہا کرے، طالبان کمانڈرز پر عائد کی جانے والی سفری پابندیوں کا خاتمہ کرے اور افغانستان سے اتحادی افواج کے انخلا کی حتمی ڈیڈ لائن دی جائے۔

ذرائع  کے مطابق  طالبان کا کہنا ہے کہ اگرسعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور پاکستان ضمانت لیں تو طالبان مطالبات پر غور کر سکتے ہیں تاہم جنگ بندی کرنا ایک مشکل عمل ہو گا۔

طالبان کا کہنا ہے کہ اگر یہ 3ممالک امریکہ اور طالبان کے مابین معاہدہ کے ضامن بنیں تو طالبان جنگ بندی پر آمادہ ہو سکتے ہیں تاہم اس کیلیے یہ گارنٹی دینا ہو گی کہ آئندہ منتخب ہونے والی حکومت میں بھی طالبان کی جانب سے نامزد کیے جانے والے نمائندے مکمل اختیارات کے حامل ہوں گے اور انتخاب سے قبل عبوری حکومت کی ریاست بھی طالبان کے حوالے کی جائے۔

News Code 1886571

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 5 =