فرانسیسی حکومت کا ملک میں ایمرجنسی نافذ کرنے پر غور

فرانس کے دارالحکومت پیرس میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف تیسرے ہفتے کے اختتام پر کیے گئے مظاہروں میں شدت آنے کے بعد حکومت نے ملک میں ایمرجنسی نافذ کرنے پر غور شروع کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اے ایف پی کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فرانس کے دارالحکومت پیرس میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف تیسرے ہفتے کے اختتام پر کیے گئے مظاہروں میں شدت آنے کے بعد حکومت نے ملک میں ایمرجنسی نافذ کرنے پر غور شروع کردیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق پیٹرولیم مصنوعات پر اضافی ٹیکس عائد کیے جانے پر عوام شدید غم و غصہ کا شکار ہیں اور یلو وسٹ موومنٹ کا دائرہ کار ملک بھر میں پھیلتا جارہا ہے۔ اے بی سی نیوز کے مطابق فرانسیسی حکومت کے ترجمان بینجمن گریووکس نے بتایا کہ صدر میکرون نے ایک اہم اجلاس طلب کرلیا ہے جس میں وزیراعظم اور وزیرداخلہ کے ساتھ بیٹھ کر مظاہرین کے ساتھ مذاکرات کے لیے حکمت عملی ترتیب دی جائے گی۔ گریووکس نے ملک میں ایمرجنسی نافذ کیے جانے سے متعلق سوال پر کہا کہ ایمرجنسی کا نفاذ مختلف آپشن میں سے ایک ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم ملک میں امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے کے لیے ہر آپشن پر غور کریں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ 17 نومبر کو پیٹرولیم مصنوعات کی قیموں میں اضافے کے خلاف پیرس میں مظاہروں کا آغاز ہوا تھا، جو دیکھتے ہی دیکھتے ملک کے دیگر حصوں میں بھی پھیل گیا ہے۔

News Code 1886125

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 2 =