ایران کے صبرو تحمل کی بھی ایک حد ہے/مشترکہ ایٹمی معاہدہ عالمی معاہدہ

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا ہے کہ ایران کے صبر و تحمل کی بھی ایک حد ہے مشترکہ ایٹمی معاہدے سے بہتر امریکہ کو کجھ نہیں مل سکتا۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ محمد جواد ظریف نے بی بی سی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران کے صبر و تحمل کی بھی ایک حد ہے مشترکہ ایٹمی معاہدے سے بہتر امریکہ کو کجھ نہیں مل سکتا۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ امریکی دباؤ کے مقابلے میں یورپی ممالک نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کو بچانے میں اہم کردار ادا کیا ہے ۔ مشترکہ ایٹمی معاہدے کی حفاظت بڑا مشکل کام ہے کیونکہ امریکہ کا عالمی مالی نظام میں بڑا وسیع کردار ہے اور یہی وجہ ہے کہ امریکہ اپنے تمام حریفوں پر اقتصادی دباؤ برقرار کرکے انھیں کمزور کرنے کی تلاش و کوشش کرتارہتا ہے۔ ظریف نے کہا کہ یورپی ممالک نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کے تحفظ کے سلسلے میں اہم کردار ادا کیا ہے اور اس سلسلے میں فرانس کے صدر میکرون، برطانیہ کی وزیر اعظم تھریسامے اور دیگر یورپی ممالک نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کو تحفظ فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔ ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران کے صبر و تحمل کی بھی ایک حد ہے ۔ انھوں نے کہا کہ مشترکہ ایٹمی معاہدہ کوئی دوطرفہ معاہدہ نہیں بلکہ چند جانبہ معاہدہ ہے جس کی سکیورٹی کونسل نے مستقل قرارداد کے ذریعہ توثیق اور تائيد کی ہے۔

News Code 1884465

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 0 =