مصر میں جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف سخت سزائیں دینے کا مطالبہ

مصر کے اعلیٰ ترین مذہبی ادارے جامعۃ الازہر نے ملک میں بدسلوکی پر مبنی حالیہ واقعات پیش آنے پر جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف سخت سزائیں دینے کا مطالبہ کردیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے مصری الیوم کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ مصر کے اعلیٰ ترین مذہبی ادارے جامعۃ الازہر نے ملک میں بدسلوکی پر مبنی حالیہ واقعات پیش آنے پر جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف سخت سزائیں دینے کا مطالبہ کردیا۔ جامعتہ الازہر نےاس بات پر زور دیا کہ ہراساں کرنے کو جرم قرار دیا جائے اور اس کا ارتکاب کرنے والوں کو بغیر کسی شرط اور تناظر میں مجرم قرار دیا جائے اور سخت سزا دی جائے۔

بیان میں ہراساں کیے جانے پر خواتین کو قصوروار ٹھہرانے کو بھی مسترد کرتے ہوئے کہا گیا کہ بدسلوکی پر مبنی رویہ خواتین کی حفاظت، آزادی اور انسانی وقار کے خلاف ہے۔واضح رہے کہ مصر میں عید الاضحیٰ کی تعطیلات کے دوران ہراساں کیے جانے والے متاثرہ افراد یا آس پاس موجود لوگوں نے اس طرح کے کئی واقعات ریکارڈ کر کے سوشل میڈیا پر پوسٹ کیے جس سے مصری عوام میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔

News Code 1883474

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 0 =