پاکستان میں 12 اسکولوں کو جلانے والے وہابی دہشت گردوں کے خلاف آپریشن جاری

پاکستان میں ضلع دیامر کے علاقہ چلاس میں 12 اسکول نذرآتش کرنے والے وہابی دہشتگردوں کے خلاف آپریشن میں ایک پولیس اہلکار جاں بحق جب کہ 2 وہابی دہشت گرد بھی مارے گئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان میں  ضلع دیامر کے علاقہ چلاس میں 12 اسکول نذرآتش کرنے والے وہابی دہشتگردوں کے خلاف آپریشن میں ایک پولیس اہلکار جاں بحق جب کہ 2 وہابی دہشت گرد بھی مارے گئے ہیں۔ دیامر میں چلاس کی تحصیل تانگیر میں پاکستانی فورسز کی جانب سے 12 اسکولوں کو نذرآتش کرنے والے وہابی دہشت گردوں کے خلاف آپریشن جاری ہے۔ اس دوران وہابی دہشت گردوں نے پولیس پر فائرنگ کردی جس سے ایک اہلکار جاں بحق ہوگیا۔ فورسز کی جوابی کارروائی میں بھی 2 وہابی دہشت گرد ہلاک ہوگئے جب کہ دو کو گرفتار کرلیا گیا۔گلگت بلتستان حکومت کے ترجمان کے مطابق ایک ہلاک دہشتگرد کی شناخت شفیق کے نام سے ہوئی ہے، جو علاقے میں کمانڈر شفیق کے نام سے مشہور تھا۔ تانگیر میں وہابی دہشت گردوں کے ٹھکانے سے خودکش جیکٹ، دستی بم اور بھاری اسلحہ بھی برآمد ہوا ہے۔چلاس میں پولیس اور سکیورٹی فورسز کا آپریشن جاری ہے اور اب تک 31 وہابی دہشت گردوں کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔ پولیس آپریشن پر دہشت گردوں کے حامی مقامی وہابی  شرپسند مشتعل ہوگئے ہیں اور تھانے پر دھاوا بول دیا۔ دو طرفہ فائرنگ کے بعد پولیس تھانے کا محاصرہ ختم کرانے میں کامیاب ہوگئی ہے۔ شرپسندوں نے تانگیر دیامر میں رکاوٹیں کھڑی کرکے سڑکیں بند کردی ہیں اور مورچے سنبھال لئے ہیں۔ جس کے نتیجے میں ایک طرح کی جنگی صورت حال پیدا ہوگئی ہے اور حالات انتہائی کشیدہ ہیں۔ واضح رہے کہ جمعہ 3 اگست کو چلاس کے علاقے داریل اور تنگی میں وہابی دہشت گردوں نے 12 تعلیمی اداروں پر حملہ کر کے انہیں آگ لگادی تھی اور بارودی مواد سے تباہ کردیا تھا۔

News Code 1882805

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 0 =