آل خلیفہ وآل سعود ہی آل یہود ہیں// آل خلیفہ کی ایپک اجلاس میں شرکت

مہر خبررساں ایجنسی – بین الاقوامی گروپ: ایک غیر ملکی ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ بحرین کے وزیر خارجہ شیخ خالد بن احمد آل خلیفہ نےواشنگٹن میں انتہا پسند صہیونی تنظیم ایپک کےاجلاس میں شرکت کرکے ثابت کردیا ہے کہ آل خلیفہ اور آل سعود کا آل یہود کے ساتھ گہرا اور قریبی رابطہ ہے بحرین پہلا اسلامی ملک ہے جس کا واشنگٹن میں سفیر ایک یہودی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے مطابق النخیل خبررساں ایجنسی نے اپنی ایک تصویری رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ بحرین کے وزیر خارجہ شیخ خالد بن احمد آل خلیفہ نےواشنگٹن میں انتہا پسند صہیونی تنظیم ایپک کے خفیہ اجلاس میں شرکت کرکے ثابت کردیا ہے کہ آل خلیفہ اور آل سعود کا آل یہود کے ساتھ گہرا اور قریبی رابطہ ہے ۔

بحرین پہلا اسلامی ملک ہے جس کا واشنگٹن میں سفیر ایک یہودی ہے۔ ایپک اجلاس میں بحرین کے وزير خارجہ شیخ خالد بن احمد آل خلیفہ کے ہمراہ واشنگٹن میں بحرین کے یہودی سفیر بھی موجود تھے۔بحرین کے وزیر خارجہ نے انتہا پسند یہودی تنظیم کے اجلاس میں فقط شرکت ہی نہیں کی بلکہ یہودی اجلاس سے خطاب بھی کیا ہے اور صہیونیوں کی اعلی شخصیات کے ساتھ ملاقات اور گفتگو کی ۔

بحرینی وزیر خارجہ نے یہودی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہےکہ مشرق وسطی میں اسرائیل کا ایک تشخص ہے اور علاقہ میں اسرائیل کا یہ تشخص ہمیشہ باقی رہےگا اور اسرائیل اور عرب ممالک کے درمیان صلح بہت قریب ہے۔

عرب ذرائع کے مطابق بحرین کے ولیعہد نے گذشتہ سال عرب ذرائع ابلاغ پر زور دیا تھا کہ وہ اسرائیل کے ساتھ عرب ممالک کے باہمی روابط کو سازگار بنانے میں مدد فراہم کریں۔

بحرینی حکام کی اسرائیل کے ساتھ ساز باز کے پیش نظر بحرین کے عوام میں آل خلیفہ کے بارے میں نفرت مزید بڑھ جائے گی  اور آل خلیفہ سے نجات پانے کے لئے بحرینی عوام کی کوششیں مزید تیز ہوجائیں گی بعض ذرائع کے مطابق بہت سے عرب ڈکٹیٹر حکام کے یہودیوں کے ساتھ قریبی روابط ہیں جس میں آل سعود خاندان بھی شامل ہے۔

News Code 1296591

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 11 =