لیبیا کے ڈکٹیٹر صدر کرنل قذافی کی حامی فوجوں نے 100 افراد کو قتل کردیا ہے

لیبیا میں کرنل قذافی کی حامی فوج اور انقلابیوں کے درمیان شدید لڑائی میں گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ایک سو سے زائد افراد مارے گئےہیں۔

مہرخبررساں ایجنسی نے الجزيرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ لیبیا کے ڈکٹیٹر صدر کرنل قذافی کی حامی فوج اور انقلابیوں کے درمیان شدید لڑائی میں گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ایک سو سے زائد افراد مارے گئےہیں۔ ۔دوسری جانب اقوام متحدہ کی جانب سے جنگ بندی کے مطالبے کے بعد یورپی یونین نے کہا ہے کہ وہ اپنی امن فوج لیبیا بھیجنے کو تیار ہے۔لیبیا کے شہر مصراتہ سے تقریباً ایک ہزار افراد کوایک فیری کے ذریعہ محفوظ مقام پرمنتقل کیا گیا۔ امریکہ اور اس کے اتحادی لیبیائی عوام کو بچانے کے بجائے لیبیا کے تیل پر اپنی نظریں جمائے ہوئے ہیں عوام کے بچآنے کے بہانے نوفلائی زون قائم کرنے والے نیٹو فوجی خود لیبیائی شہریوں کو اپنی بربریت کا نشانہ بنا رہے ہیں بعض ذرائع‏ کے مطابق امریکہ در پردہ قذافی کے ساتھ تیل کے معاملات پر گفتگو کررہا ہے۔لیبیاکے مختلف علاقوں سے تقریبا گیارہ ہزار افراد جان بچاکر تیونس پہنچ گئے ہیں۔قذافی کی حامی فورسزتوپ خانے سے شدید گولہ باری کے ساتھ مغربی شہروں کی آبادی کو بھی نشانہ بنارہی ہیں جس کے نتیجے میں ایک سو دس افرادمارے گئے۔  ذرائع کے مطابق لیبیا میں مجموعی طور پر اب تک دس ہزار سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

News Code 1292615

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 4 =