اسرائیل کے وزیرخارجہ لیبرمین کے خلاف کرپشن کےالزامات پرمقدمہ

اسرائیل کے اٹارنی جنرل نے اعلان کیا ہے کہ اسرائیلی وزیر خارجہ ایوگ دور لیبرمین کے خلاف کرپشن کے الزامات کے تحت مقدمہ چلے گا۔

مہرخبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہاسرائیل کے اٹارنی جنرل نے اعلان کیا ہے کہ اسرائیلی وزیر خارجہ ایوگ دور لیبرمین کے خلاف کرپشن کے الزامات کے تحت مقدمہ چلے گا۔اٹارنی جنرل نے کہا ہے کہ ایوگ دور لیبرمین پر باضابطہ الزام عائد کرنے سے پہلے انہیں اپنی صفائی پیش کرنے کا ایک موقع دیا جائے گا۔ ایوگ دور لیبرمین پر کئی سالوں سے کرپشن کے الزامات عائد ہو رہےتھے لیکن وہ فلسطینیوں کے بارے میں اپنے زہریلے بیانات کی وجہ سیاسی میدان میں آگے بڑھتے رہے اور گزشتہ انتخابات میں ان کے جماعت نے فیصلہ کن نشتیں حاصل کر لیں۔ایوگ دور لیبرمین نے نیتن یاہو کے ساتھ اتحاد بنا کر اپنے لیے وزارت خارجہ کا کلیدی عہدہ حاصل کر لیا۔

اٹارنی جنرل کے مطابق وزیر خارجہ کو دھوکہ دہی اور منی لانڈرنگ کے الزامات کا سامنا ہے۔ ایوگ دور لیبرمین پر اگر باضابطہ الزام عائد کر دیا گیا تو وزیر اعظم نیتن یاہو وزیر خارجہ کو اپنی کابینہ سے خارج کرنے کے پابند ہیں۔  اسرائيل کے اکثر حکام مالی بد عنوانیوں اور جنسی اسکینڈل میں ملوث رہے ہیں جن میں اسرائیل کے صدرموشے کتساو بھی شامل ہیں جنھیںزنا بالجبر کا مجرم قراردیا جاچکا ہے اسرائیلی حکومت ہر لحاظ سے منحوس اور منفور حکومت ہے۔

News Code 1288840

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 0 =