مصر کے سابق صدر اور اس کے دو بیٹے تشدد اور کرپشن کے الزام میں گرفتار

مصر کے سابق ڈکٹیٹر صدر حسنی مبارک اور اس کے دو بیٹوں کوکرپشن اور مصری عوام پر ظلم وتشدد کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی  کی رپورٹ کے مطابق مصر کے سابق ڈکٹیٹر صدر حسنی مبارک اور اس کے دو بیٹوں کوکرپشن اور مصری عوام پر ظلم وتشدد کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سابق مصری ڈکٹیٹرصدر حسنی مبارک کے دوبیٹوں کوکرپشن کےالزامات کی پوچھ گچھ کے سلسلے میں 15 روز کے لیے نظر بندکردیاگیاہے.تفتیش کے دوران حسنی مبارک کو دل کا دورہ پڑ گیا جس کے بعد اسے شرم الشیخ اسپتال میں داخل کردیا ہے سرکاری وکیل نے حسنی مبارک کو بھی 15 دن نظر بند رکھنے کے احکامات صادر کئے ہیںگزشتہ روز اختیارات کے ناجائز استعمال اور بدعنوانیوں کے الزامات سے متعلق سابق صدر حسنی مبارک سے تفتیش کے دوران انہیں دل کادورہ پڑا جس پر انھیں شرم الشیخ میں واقع انٹرنیشل اسپتال کے انتہائی نگہداشت کے شعبے میں منتقل کیا گیا۔اب ان کی حالت قدرے بہتر ہے اور حسنی مبارک کو بھی 15 دن کے لئے گرفتار کرلیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ مصری صدر حسنی مبارک نے غزہ جنگ میں اسرائیل کا بہت زيادہ تعاون کیا تھا اور اسرائیل اور سعودی عرب نے مصری فوعون اور ڈکیٹر صدر حسنی مبارک کو بچانے کی آخری وقت تک بہت کوشش کی لیکن اسرائیل اور سعودی عرب کی تمام کوششیں ناکام ہوگئیں۔

News Code 1288314

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 5 =