لیبیا پر فوجی آپریشن کی کمانڈ نیٹو نے سنبھال لی ہے

امریکی سربراہی میں لیبیا کے خلاف ہونے والے فوجی آپریشن کی مکمل کمانڈ نیٹو نے سنبھال لی ہےامریکہ اور نیٹو رکن ممالک عوامی انقلاب کی آڑ میں لیبیا کے تیل پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی سربراہی میں لیبیا کے خلاف ہونے والے فوجی آپریشن کی مکمل کمانڈ نیٹو نے سنبھال لی ہےامریکہ اور نیٹو رکن ممالک عوامی انقلاب کی آڑ میں لیبیا کے تیل پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔ امریکہ ، نیٹو اور قذافی میں کوئی فرق نہیں ہے قذافی کل تک امریکہ، فرانس، اٹلی اور دیگر یورپی ممالک کا سب سے بڑا اتحادی اور تجارتی شریک تھا انھوں نے قذافی کو جو ہتھیار فراہم کئے تھے انھیں حالیہ حملوں میں انھوں نے تباہ کردیا ہے اب لیبیا دوبارہ ان سے ہتھیار خریدنے پر مجبور ہوگا۔نیٹو کے سیکریٹری جنرل انڈرس فوگ راسموسن نے کہا کہ ان کا مقصد قذافی کو فوجوں سے شہریوں کو بچانا ہے۔ تاہم فرانس اور ترکی نے ناٹو کے کردار پر تحفظات کا اظہار کیاہے۔ امریکی وزیر خارجہ رابرٹ گیٹس کا کہنا ہے کہ فوجی کارروائی کا مقصد لیبیا میں اقتدار کی تبدیلی نہیں تھا۔ادھر لیبیا میں کھانے پینے کی اشیا کی قلت بڑھتی جار ہی ہے اور دارالحکومت طرابلس میں پیٹرول پمپوں پر لوگوں کی لمبی قطاریں لگی ہوئی ہیں، قذافی کی وجہ سے لیبیا کے عوام کو اس وقت  قذافی اور اتحادی فوجیوں کی جانب سے تباہی اور بربادی کا سامنا ہے۔

News Code 1278560

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 1 =