قذافی کے مغربی دوستوں کی طرف سے لیبیا پر بمباری

فرانسیسی صدر اور قذافی کے دوست سرکوزی نے اعلان کیا ہے کہ فرانسیسی طیاروں نے لیبیا پر فضائی حملہ کیا ہے اور فرانسیسی طیارے قذافی کو عوام کا قتل عام کرنے سے روک رہے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے الجزيرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فرانسیسی صدر اور قذافی کے دوست سرکوزی نے اعلان کیا ہے کہ فرانسیسی طیاروں نے لیبیا پر فضائی حملہ کیا ہے اور فرانسیسی طیارے قذافی کو عوام کا قتل عام کرنے سے روک رہے ہیں۔فرانس کے وزیر دفاع کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ لیبیا کی فضائی ناکہ بندی کی نگرانی20طیارے کر رہے ہیں۔فرانسیسی طیارے سے لیبیا کی فوجی گاڑی پر فائرنگ کی گئی۔فرانسیسی طیارے نے لیبیا میں پہلا ہدف تباہ کردیا جبکہ بن غازی کے اطراف100 سے150 کلومیٹرعلاقے میں آپریشن ہورہا ہے۔اس سے قبل فرانس نے کہاتھا کہ لیبیا پر چند گھنٹے میں فضائی حملے کرسکتے ہیں،جبکہ لیبیا کے رہنما کرنل معمر قذافی کو دھمکی دی گئی تھی کہ وہ اقوام متحدہ کے مطالبات کا احترام کریں یا پھر فوجی ایکشن کیلئے تیار ہوجائیں ادھر بعض ذرائع کے مطابق امریکہ نے بھی اپنے کروز میزائلوں کا لیبیا پر تجربہ شروع کردیا ہے۔ عرب نادان اور پاگل ڈکٹیٹروں نے عرب قوم کی دولت مغربی ممالک کو کھلاتے رہے انھیں تیل بیچتے رہے لیکن آج ان عرب نادان اور ڈکٹیٹر حکام کی وجہ سے عرب قوم سخت مشکلات سے دوچار ہے۔ مبصرین صرف لیبیا کے خلاف فوجی کارروائی کو مغربی ممالک کی متضاد پالیسی کا حصہ قراردے رہے ہیں  لیببیا پر مغربی ممالک کا حملہ لیبیا عوا م کی حفاظت کے لئے نہیں بلکہ تیل کی حفاظت  کے لئے  کیا گیا ہے ورنہ عوام کا قتل عام تو بحرین اور یمن میں بھی جاری ہے یمن اور بحرین کی حکومتوں کے خلاف کیوں کوئي کارروائی نہیں کی جارہی ، کیونکہ یمن اور بحرین کے حکمراں ابھی امریکہ کے وفادار ہیں جب وہ وفاداری بدلیں گے تو ان کا حشر بھی صدام جیسا قذافی جیسا شاہ ایران جیسا اور حسنی مبارک جیسا ہوگا امریکہ نواز حکمراں زیادہ خوشحال نہ ہوں  وہ امریکہ کے مکر و فریب سے ہر گز نہیں بچ سکتے عرب کو چاہیے تھا کہ وہ امریکہ کے دوست گہری دوستی کرنے کے بجائے اپنے عوام کے حقوق کو بحال کرتے ۔

News Code 1276894

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 11 =