پاکستانی فوج کے سربراہ نے قبائلی علاقہ میں امریکی ڈرون حملے کی شدید مذمت کی ہے

پاکستان کی فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی نے جمعرات کو شمالی وزیرستان میں ہونے والے امریکی ڈرون حملے کی شدید مذمت کی ہے، اس حملے میں 40 سے زائد افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کی فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی نے جمعرات کو شمالی  وزیرستان میں ہونے والے تازہ ڈرون حملے کی مذمت کی ہے۔ اس حملے میں 40 سے زائد افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔

آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں فوجی سربراہ نے کہا کہ یہ انتہائی افسوناک ہے کہ پر امن شہریوں کے جرگے کو جس میں علاقے کے بزرگ افراد بھی شامل تھے انتہائی لاپرواہی اور سخت دلی سے نشانہ بنایا گیا۔جنرل کیانی نے کہا کہ یہ انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے اور اس طرح کی پر تشدد کارروائیاں ہمیں دہشتگردی ختم کرنے کے مقصد سےدور لے جاتی ہیں‘۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام کی حفاظت ہر حال میں اہم ہے۔پاکستانی فوج نے اس بات کو سختی سے اور صاف الفاظ میں واضح کیا ہے کہ پاکستان کے لوگوں کے خلاف اس طرح کا رویہ ہر حال میں ناقابلِ قبول ہے۔پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ ’پاکستانی فوج ان لوگوں کے دکھ میں شریک ہے جن کے عزیز واقارب بے معنی حملے میں شہید ہوئے ہیں‘ اور فوج وزیرستان کے عوام کے دکھ میں برابر کی شریک ہے اور وہاں موجود فوجی دستوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ متاثرہ کنبوں کو ہر ممکن مدد فراہم کی جائے۔واضح رہے کہ جمعرات کی صبح شمالی وزیرستان کے صدر مقام سے چالیس کلومیٹر دور دتہ خیل کے نئے اڈے کے قریب امریکی جاسوس طیاروں نے حملہ کیا جس کے نتیجہ میں 40 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے۔

News Code 1276341

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 6 =