سعودی عرب میں جاہلیت کےدور کی بازگشت/ باپ نے بیٹی کو زندہ جلادیا

سعودی عرب میں ایک سعودی عورت نے اپنی گیارہ سالہ بچی کی دردناک موت کا راز فاش کرتے ہوئےکہا ہےکہ اس کے شوہرنے اپنی گیارہ سالہ بیٹی کو زندہ آگ میں جلا یا اور پھر انتظار کرتا رہا تاکہ وہ دم توڑ دے جب لڑکی نے دم توڑدیا تو اسے غسل و کفن دیکرکر صحرا میں دفن کردیا ہے.

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں ایک سعودی عورت سلامہ المنصوری نےسعودی عرب کے اخبار عکاظ کے ساتھ گفتگو میں اپنی گیارہ سالہ بچی سارہ المنصوری کی دردناک موت کا راز فاش کرتے ہوئےکہا ہےکہ اس کے شوہرنے اپنی گیارہ سالہ بیٹی کو زندہ آگ میں جلا یا اور پھر انتظار کرتا رہا تاکہ وہ دم توڑ دے جب لڑکی نے دم توڑدیا تو اسے غسل و کفن دیکرکر صحرا میں دفن کردیا ہے۔ سلامہ المنصوری نے اخبار عکاظ کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ باپ نے سارہ کے سامنے قبر کھودی اور سارہ قبر کھودنے کا منظر دیکھتی رہی پھر باپ نے زندہ بیٹی کو آگ میں جلادیا سعودی عورت نے سعودی عرب کی عدالت میں شکایت کرتے ہوئے اس دردناک واقعہ کی تحقیق کا مطالبہ کیا ہے۔

سلامہ المنصور نے اپنے شوہر سے طلاق لے رکھی ہے سلامہ منصور کے پہلے شوہر کی کئی بیویاں ہیں سلامہ منصور کا کہنا ہے کہ طلاق لینے کے بعد اس نے اپنی بیٹی کو نہیں دیکھا ۔

News Code 1275146

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 3 =