رہبر معظم نے مؤثر و پیشرفتہ ٹیکنالوجی کی نمائشگاہ کا مشاہدہ کیا

رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے کل پانچ گھنٹے سے زیادہ عرصہ تک مؤثر وپیشرفتہ ٹیکنالوجی کی نمائشگاہ کے مختلف شعبوں کا قریب سے مشاہدہ کیا۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے پانچ گھنٹے سے زیادہ عرصہ تک مؤثر وپیشرفتہ ٹیکنالوجی کی نمائشگاہ کا قریب سے مشاہدہ کیا اور متعلقہ حکام کی راہنمائی میں ایران کے ممتاز محققین اور سائنسدانوں کی علمی و ٹیکنالوجی شعبہ میں کاوشوں اور تحقیقی کوششوں کے نتائج کا مختلف اطاقوں میں قریب سے مشاہدہ کیا اور ملک کے سائنس و ٹیکنالوجی کے شعبہ میں سرگرم سائنسدانوں کی کاوشوں کے بارے میں مزید آگاہی حاصل کی۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے مؤثرو اسٹراٹیجک  ٹیکنالوجی کی نمائشگاہ میں پہنچنے کے بعد شہید علی محمدی اور شہید شہریاری کے مزار پر حاضر ہو کر سورہ فاتحہ کی تلاوت کی  اور علم و ایمان کے میدان کے شہداءکی بلندی درجات کے لئے دعا کی۔

سائنس و ٹیکنالوجی کی اس نمائشگاہ میں  ایرانی محققین و سائنسدانوں  کی ہوا و فضا، مائیکروالیکٹرانک ، جدید انرجی ، نانو ٹیکنالوجی، سٹیم سیلز ٹیکنالوجی، انفارمیشن اور ارتباطات پر مبنی ٹیکنالوجی، ماحولیات پر مبنی ٹیکنالوجی ، ایرانی طب ، اور میڈیکل پرمبنی ٹیکنالوجی کے مختلف شعبوں میں اختراعات، ایجادات اور تخلیقات کو نمائش کے لئے پیش کیا گيا تھا۔

قومی منصوبہ کی روشنی میں" مقناطیسی روش کے محور پر ایٹمی ری ایکٹر کے حرارتی مادہ کی آزمائشی ٹیکنالوجی کی ڈیزائن وتعمیر"  منجملہ ایسے علمی نتائج تھے جنھیں جدید ٹیکنالوجی کے شعبہ پیش کیا گیا تھا،ایٹمی گداخت بجلی کی پیداوار میں جدید ترین اور پیشرفتہ ترین روش ہے جو آئندہ چند برسوں میں موجودہ روش ایٹمی شکافت کی جگہ لے لےگی، اسلامی جمہوریہ ایران کی اس منصوبہ پر اس وقت تحقیقات اور ریسرچ جاری ہے اور مستقبل قریب میں اسلامی جمہوریہ ایران ایٹمی گداخت بجلی پلانٹ کی تعمیر کا کام شروع کردےگا۔

امیر کبیر یونیورسٹی میں سپرقومی کمپیوٹر کی ڈیزائن اور تعمیرمنجملہ بڑے قومی منصوبے میں شامل ہے جسے اس نمائشگاہ میں پیش کیا گیا تھا۔ اور کلی طور پر اس کمپیوٹرکا ڈیزائن، نقشہ اور ساخت کے تمام مراحل ملک کے اندر اور امیر کبیر صنعتی یونیورسٹی میں انجام پائے ہیں، سپر کمپیوٹر کو بنانے کی ٹیکنالوجی صرف دس ممالک کے پاس ہے سرعت اور سپیڈ کے لحاظ سے سپرکمپیوٹر ایک ثانیہ میں 89 ہزار ارب عملیات انجام دینے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

امیر کبیر صنعتی سیٹلائٹ منجملہ امیر کبیر صنعتی یوینورسٹی کے ماہرین اور سائنسدانوں کی توانائیوں کا مظہر ہے جسے اس نمائشگاہ میں پیش کیا گيا تھا۔

میڈيکل شعبہ میں کینسر کے غدد کے علاج کے لئے جدید ترین ٹیکنالوجی، ریڈيو ایزوٹوپ مشین، کنویں کے اندر کھدائی کے عمل کی ہدایت کرنے والا مقناطیسی آلہ ،پرواز کے دوران فضا میں معلق ہوکر فوٹو گرافری ، فلمبرداری اور سرعت کے ساتھ ان کی ترسیل میں مددگار زحل ہوائی طشتری، 2 سے 40 گیگا ہرٹز فریکنوینسیوںپر راڈار سے متعلق انفارمیشن اور اٹومیٹیک سسٹم ، راڈار کا اٹو میٹیک سسٹم ، موسمیاتی اطلاعات کے مقامی اٹومیٹک سسٹم کی تعمیر، ایرانی سائنسدانوں کی دیگر کاوشوں کا حصہ تھا جسے اسٹراٹیجک نمائشگاہ میں پیش کیا گيا تھا۔

اسی طرح مقامی طور پر بنائے گئے نوید اورظفر سیٹلائٹ کو بھی اس نمائشگاہ میں پیش کیا گيا تھا یہ دونوں سیٹلائٹ جلد ہی فضا میں روانہ کئے جائیں گے۔

فضائی شعبہ سے متعلق ٹیکنالوجی میں بائیو لوجیکل سلینڈر کو پیش کیا گيا ہےاس سلینڈر کے ذریعہ  زندہ موجودات بالخصوص انسان کو فضا میں بھیجا جائے گا بایو لوجیکل سلینڈر کو بھی اس نمائشگاہ میں پیش کیا گیا تھا، پروگرام کے مطابق عنقریب اس بائیو لوجیکل سلینڈر کے ذریعہ کسی زندہ جانور کو 120 کلو میٹر کی بلندی پر فضا میں روانہ کیا جائے گا اور صحیح و سالم اور بحفاظت واپس لایا جائے گا۔ خلائی سفر میں ریسرچ و تحقیقات کے ضروری شرائط کے لئے کم وزن اہم مشین کو بھی اس نمائشگا میں پیش کیا گیا تھا جو فضا میں زندہ موجود کی تمام بائیولوجیکل تبدیلیوں کی نشاندہی کرتی ہے ۔

اسٹراٹیجک و مؤثر ٹیکنالوجی کی اس نمائشگاہ میں اسپورٹ طیارے کو بھی پیش کیا گیا ہے جو تھری کلاس پائلٹوں کی توانائی رکھتا ہے یہ ٹو سیٹر طیارہ  کلی طور پر کمپوزیٹ ہے جس کے ماڈل اور تیاری کے تمام مراحل ملک کے اندر انجام پائے ہیں کئی شعبوں میں کام آنے والا طیارہ مائیکروجیٹ بھی اس نمائشگاہ میں پیش کیا گیا ہے۔

مؤثر و اسٹراٹیجک نمائشگاہ کا دوسرا شعبہ رویان ریسرچ سینٹر کے سائنسدانوں کی تحقیقات پر مشتمل تھا جو اسٹیم سیلزاور کلوننگ بینک پر مشتمل تھا اس شعبہ میں ماہرین اور محققین نےسٹیم سیلزاور کلوننگ کے مختلف اور گوناگوں شعبوں میں ہونے والی پیشرفت سے رہبر معظم انقلاب اسلامی  کو آگاہ کیا۔ اسٹراٹیجک نمائشگاہ میں نانو ٹیکنالوجی میں ہونے والی نمایاں  پیشرفت و ترقی کے وسائل کو بھی پیش کیا گیا تھا اور اس کے ساتھ ساتھ پیشرفتہ میڈيکل دواؤں ، نانو دواؤں کے ذریعہ کینسر اور قلبی بیماریوں کے علاج کے سلسلے میں ہونے والی پیشرفت کو بھی نمائشگاہ میں پیش کیاگيا تھا۔

میڈيکل شعبہ سے متعلق ایجادات میں سینہ کے کینسر کی بروقت تشخیص کے لئے  ڈیجیٹل میموگرافی مشین ، گردے کی پتھری کے علاج کے لئے یورو لوجی لیزر مشین ، قلبی بیماریوں کی تشخیص کے لئے اسمارٹ مشین، خون کے ٹیسٹ کے بغیر خزن کے اندرشگر کی تشخیص کی مشین اورجدید ٹیکنالوجی پر مشتمل  ایم آر آئی کی مشین کو بھی نمائشگاہ میں پیش کیا گیا تھا۔

میڈيکل ایکسرے کی جدید ترین مشین جسے ملک کے اندر ماہرین نے تیار کیا ہے وہ بھی اس نمائشگاہ میں پیش کی گئی تھی۔

اسٹراٹجیک و مؤثر ٹیکنالوجی کی نمائشگاہ میں بائیو ایمپلٹز کو بھی پیش کیا گیا تھا اور بائیو ایپیلٹ کے جدید ترین نمونوں کو پیش کیا گیا تھا۔

متبادل انرجی کے شعبہ میں پانی کے اندر نوری شعائیں، کوئلے کے بغیر چلنے والےدنیا کے جدید ترین الیکٹرانک انجن کی ساخت، سولر ڈش جس سے حرارتی سسٹم میں استفادہ کیا جاتا ہے  ، اس کے علاوہ  پہلی ہائبریڈ بس کی ساخت ، انجن کی ساخت ، گئربکس اوربادی بجلی پلانٹ کو بھی نمائشگاہ میں پیش کیا گیا تھا۔

اس نمائشگاہ کا ایک حصہ سنتی ، جڑی بوٹیوں اور دیسی دواؤں سے مخصوص تھا اس شعبہ میں بھی  ایرانی ماہرین کی تحقیقات پر مبنی آخری ایجادات کو پیش کیا گیا تھا۔

اس نمائشگاہ میں 18 گیگا ہرٹز بینڈ پر سیٹلائٹ کو سگنل بھیجنے اوراطلاعات دریافت کرنے والے انٹینا کا منصوبہ  اور اس کے ساتھ  سیٹلائٹ ارسال کرنے کا متحرک اسٹیشن یاایس، این، جی ، ڈیجیٹل تصاویر حاصل کرنےکا ڈیزائننگ پروجیکٹ کوبھی نمائشگاہ میں پیش کیا گيا تھا۔

News Code 1274967

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 6 =