یمن میں عبد اللہ صالح کے خلاف عوامی مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے

یمن میں صدر علی عبداللہ صالح کےخلاف دھرنا دینے والے مظاہرین پر پولیس نے فائرنگ اورلاٹھی چارج کیا ،جس سے ایک نوجوان ہلاک اورسیکڑوں زخمی ہوگئےہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے الجزيرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ یمن میں صدر علی عبداللہ صالح کےخلاف دھرنا دینے والے مظاہرین پر پولیس نے فائرنگ اورلاٹھی چارج کیا ،جس سے ایک نوجوان ہلاک اورسیکڑوں زخمی ہوگئےہیں۔ یمن کے طبی ذرائع کے مطابق دارالحکومت صنعا میں دھرنے پر کئی ہفتے سے بیٹھے مظاہرین پر پولیس نے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کی شیلنگ کی ۔اس دوران پولیس نے فائرنگ بھی کی ،سر پر گولی لگنے سے ایک نوجوان ہلاک ہوگیا۔ طبی ذرائع کے مطابق پولیس کے تشدد سے تقریباً300افراد زخمی ہوئے ہیں ۔مظاہرین صدر علی عبداللہ صالح کے32سالہ اقتدار کے خاتمے کا مطالبہ کررہے تھے۔ ادھر بحرین میں بھی حکومت کے خلاف مظاہرے جاری ہیں اور سعودی عرب میں بھی مظاہرین بادشاہی نظآم کے خاتمہ اور جمہوریت کا مطالبہ کررہے ہیں برسر اقتدار عرب حکام اطلاحات اور عوامی مطالبات سننے کے بجائےطاقت کے زور پر عوامی مظاہروں کو دبانے کی تلاش و کوشش کررہے ہیں ۔

News Code 1272655

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 3 =