پاکستان میں نماز جنازہ میں طالبان کے خودکش حملے میں 34 افراد ہلاک

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخواہ کے دارالحکومت پشاور کے مضافاتی علاقے متنی ادیزئی میں طالبان دہشت گردوں نےنماز جنازہ میں خزدکش حملہ کیا ہے جس کے نتیجہ میں 34 افراد ہلاک اور 42 زخمی ہوگئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہپاکستان کے صوبہ خیبر پختونخواہ کے دارالحکومت پشاور کے مضافاتی علاقے متنی ادیزئی میں طالبان دہشت گردوں نےنماز جنازہ میں خزدکش حملہ کیا ہے جس کے نتیجہ میں 34 افراد ہلاک اور 42 زخمی ہوگئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق دھماکہاس وقت ہوا جب امن لشکر کے راہنما کالام خان کی بہو کی نماز جنازہ ادا کی جا رہی تھی۔ اس دوران ایک نوجوان خود کش حملہ آور صفوں میں گھسااور خود کو دھماکے سے اڑا دیا۔ عینی شاہدین کے مطابق دھماکے کے بعد اس مقام پر افراتفری پھیل گئی۔ دھماکہاس قدر شدید تھا کہ25 افراد موقع پر ہی ہلاک ہو گئے،زخمیوں کو قریبی اسپتال منتقل کیا گیا،جہاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے مزید9 افراد ہلاک گئے۔ عینی شاہدین کے مطابق جنازے کے موقع پر پولیس سکیورٹی کا انتظام نہیں تھا۔ طالبان دہشت گرد اکثر مقدس مقامات اور عوامی اجتماعات کو اپنی، بربریت کا نشانہ بناتے رہتے ہیں بعض ذرائع کے مطابق طالبان دہشت گرد امریکی اور صہیونی آلہ کار تنظيم ہے جنھیں پیشرفتہ ہتھیار امریکہ کی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے اہلکار فراہم کرتے رہتے ہیں۔

News Code 1270772

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 2 =