ایرانی فوجی کشتیوں کا نہر سوئیز سے عبور کرتے ہوئےمصری شہیدوں کو خراج تحسین

مصر میں اسلامی جمہوریہ ایران کے ناظم الامور نے گذشتہ 30 برسوں میں ایران اور مصر کے درمیان باہمی روابط کے نہ ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مصر میں حالیہ انقلاب کے پیش نظر تہران اور قاہرہ کے باہمی روابط میں فروغ مناسب ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مصر میں اسلامی جمہوریہ ایران کے ناظم الامور مجتبی امانی نے العالم سے گفتگو میں گذشتہ 30 برسوں میں ایران اور مصر کے درمیان باہمی روابط کے نہ ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مصر میں حالیہ انقلاب کے پیش نظر تہران اور قاہرہ کے باہمی روابط میں فروغ مناسب ہے۔ انھوں نے مصر میں اعلی فوجی انتظامی کونسل کے مؤقف کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ مصری فوج سنجیدگي کے ساتھ عوامی مطالبات پر عمل شروع کئے ہوئے ہے اور ایران قریب سے مصر کے حالات پر نظر رکھے ہوئے ہے انھوں نے کہا کہ گذشتہ برسوں میں ایران اور مصر کے باہمی روابط میں کافی تیرگی تھی لیکن حسنی مبارک کے زوال کے بعد اب دونوں ممالک کے باہمی روابط کو فروغ دینا بہت ضروری ہے انھوں نے کہا کہ اسرائیل کے ساتھ حسنی مبارک کی حکومت کے روابط پر ایران نے ہمیشہ اعتراض کیا انھوں نے مصری عوام کے انقلاب کی مکمل حمایت کرتے ہوئے کہا کہ ایران میں کئي ملین ایرانیوں نے مصری عوام کی حمایت میں مظاہرے کئے۔ امانی نے مصر کی طرف سےایرانی فوجی کشتیوں کو نہر سوئیز سے عبور کرنےکی اجازت پر مصری فوجی حکومت اور مصری عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی فوجی کشتیوں نے مصری فوج کے شہیدوں کو خراج تحسین پیش کیا
News Code 1266664

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 13 =