مغربی ایشیاء کا علاقہ امریکی تمناؤں کے قبرستان میں تبدیل ہوگیا

اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں نماز جمعہ کے خطیب نے امریکی تمدن کے زوال کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مغربی ایشیائی علاقہ امریکی تمناؤں کے قبرستان میں تبدیل ہوگیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں نماز جمعہ حجۃالاسلام والمسلمین حاج علی اکبری کی امامت میں منعقد ہوئی ، جس ميں لاکھوں افراد نے شرکت کی۔ خطیب نے امریکی تمدن کے زوال کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مغربی ایشیائی علاقہ،  امریکی تمناؤں کے قبرستان میں تبدیل ہوگیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ امریکی صدر ٹرمپ کا عراق کا مخفیانہ دورہ اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے کہ خطے میں امریکی تمنائیں اور آرزوئیں خاک میں مل گئي ہیں اور امریکہ اپنے اتحادیوں کے ساتھ  اپنے اہداف تک پہنچنے میں ناکام ہوگيا ہے۔ انھوں نے کہا کہ خطے میں اسرائیل کی طاقت کا طلسم بھی اسلامی مزاحمتی تنظیموں نے توڑ دیا ہے اور اب  اسرائیل کی شکست مہینوں سے ہفتوں اور ہفتوں سے دنوں  اور گھنٹوں میں تبدیل ہوگئی ہے۔ انھوں نے کہا کہ علاقائي ممالک میں اسلامی مزاحمت کا ایک شاندار حلقہ بن گيا ہے اور اس حلقے میں شام، عراق، لبنان یمن، بحرین اور فلسطین شامل ہیں جو اسرائیل کے خلاف متحدہ محاذ میں شامل ہیں۔ تہران کے عارضي خطیب جمعہ نے اس سال 22 بہمن کیے انعقاد کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اس سال کا 22 بہمن گذشتہ سالوں کے 22 بہمن سے مختلف ہوگا ۔ 22 بہمن کے دن امریکہ کی تمام امیدوں کو خاک میں ملانے کا دن ہے اور یہ دن امریکہ کی شکست اور مظلوم قوموں کی فتح کا دن ہے ۔

News Code 1887024

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 0 =