امریکی عدالت میں لاتوں، گھونسوں اور تھپڑوں کا آزادانہ استعمال

امریکہ میں ایک عدالت میں بچی کے قتل کے کیس میں خاتون کو سزا ملنے کے بعد دونوں فریقین آپس میں لڑ گئے اور لاتوں، گھونسوں اور تھپڑوں کا آزادانہ استعمال کیا گیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ میں ایک عدالت میں بچی کے قتل کے کیس میں خاتون کو سزا ملنے کے بعد دونوں فریقین آپس میں لڑ گئے اور لاتوں، گھونسوں اور تھپڑوں کا آزادانہ استعمال کیا گیا۔ امریکہ میں بچی کے قتل کے کیس میں خاتون کو سزا ملنے کے بعد دو گروپس نے عدالت کو ہی اکھاڑے میں تبدیل کر دیا۔ امریکی شہر ملواکی کی عدالت میں 7ماہ کی بچی کے قتل کے کیس میں خاتون کو 3سال قید کی سزا سنائی گئی جس کے بعد عدالت میں دونوں فریقین لڑ پڑے۔ اس دوران 50افراد ایک دوسرے کے ساتھ گتھم گتھا ہوگئے اور ایک دوسرے پر مکوں،تھپڑوں اور لاتوں کی برسات کردی پولیس کی مداخلت کے بعد لڑائی ختم ہوگئی۔

News Code 1885920

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 4 =