چینی معیشت تالاب نہیں سمندر ہے/ طوفان اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتے

چینی صدر شی چن پنگ نے شنگھائی میں بین الاقوامی درآمدی نمائش کی تقریب سے خطاب میں کہا ہے کہ گلوبلائزیشن نے جنگل کے قانون کو ختم کردیا ہے۔ چینی معیشت تالاب نہیں بلکہ سمندر ہے اور طوفان اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے روسیا الیوم کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چینی صدر شی چن پنگ نے شنگھائی میں بین الاقوامی درآمدی نمائش کی تقریب  سے خطاب میں کہا ہے کہ گلوبلائزیشن نے جنگل کے قانون کو ختم کردیا ہے۔ چینی معیشت تالاب نہیں بلکہ سمندر ہے اور طوفان اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتے۔چینی شہر شنگھائی میں بین الاقوامی درآمدی نمائش کی تقریب میں 30 ممالک کے 130 مندوبین نے شرکت کی۔ چین کے صدر نے نمائش میں شریک مہمانوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ڈیجیٹیل ٹیکنالوجی اور مصنوعی ذہانت نے دنیا میں انقلاب برپا کردیا ہے، دنیا بھر کے ممالک کو مشترکہ چیلنجز اور خطرات کا سامنا ہے، گلوبلائزیشن نے " جنگل کے قانون " اور "جو جیتا سب اسی کا " والی سوچ کا خاتمہ کردیا ہے ، چینی معیشت تالاب نہیں بلکہ سمندر ہے اور طوفان اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتے۔

شی چن پنگ نے کہا کہ چین درآمدات بڑھا کر عالمی برادری سے تعلقات مستحکم کرنا اور دیگر ممالک کے ساتھ تجارتی فرق ختم کرنا چاہتا ہے، چین کے دروازے تمام ممالک کیلیے مزید وسیع کریں گے اور سرمایہ کاروں کے لیے چینی مارکیٹیں کھولیں گے۔چینی صدر شی چن پنگ نے کہا کہ تجارت اور سرمایہ کاری کے مواقع بڑھائے جائیں گے، چین آئندہ 15 سال میں 30 کھرب ڈالر کی اشیا درآمد کرے گا، جب کہ 10 کھرب ڈالر کی خدمات بھی درآمد کی جائیں گی۔

News Code 1885369

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 8 =