نابلس میں فلسطینی بچوں کے اغوا میں یہودی گینگ کے ملوث ہونے کا انکشاف

فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے میں فلسطینی بچوں کے اغوا کی سازشوں کے پیچھے ایک خطرناک یہودی گینگ کے ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے عرب ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے میں فلسطینی بچوں کے اغوا کی سازشوں کے پیچھے ایک خطرناک یہودی گینگ کے ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔

مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق غرب اردن کے شمالی شہر نابلس میں اللبن کے مقام سے ایک فلسطینی بچے کے اغوا کی کوشش کی گئی مگر فلسطینی شہریوں نے بچے کے اغوا کی سازش ناکام بنا دی۔ مقامی شہریوں کے مطابق یہودی آباد کاروں نے 10 سالہ بچے کو اغوا کر کے ایک یہودی کالونی میں لے جانے کی کوشش کی مگر فلسطینیوں نے یہودی شرپسندوں کا تعاقب کیا۔ فلسطینیوں کو پیچھے آتے دیکھ کر یہودی آباد کار بچے کو چھوڑ کر فرار ہوگئے۔مقامی فلسطینیوں نے کہا کہ ان کے بچوں کو یہودی آباد کاروں کی طرف سے سخت خطرات ہیں۔ جس گروپ نے بچے کے اغوا کی کوشش کی ہے وہ اس سے قبل فلسطینیوں کی املاک پر حملوں میں ملوث رہا ہے اور بچوں کے اغوا اور انہیں قتل کرنے جیسے سنگین جرائم میں بھی ملوث رہا ہے۔

News Code 1884724

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 8 =