انقلاب اسلامی کی کامیابی کے بعد والا حج، انقلاب سے پہلے والے حج سے متفاوت

رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے حج ادارے کے اہلکاروں سے ملاقات میں فرمایا: انقلاب اسلامی کی کامیابی کے بعد والا حج انقلاب سے پہلے والے حج اور برائ نام اسلامی ممالک کے حج سے بہت ہی متفاوت اور مختلف ہے انقلاب اسلامی کی کامیابی کے بعد والا حج ہی درحقیقت حج ابراہیمی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے حج ادارے کے اہلکاروں سے ملاقات میں فرمایا: انقلاب اسلامی کی کامیابی کے بعد والا حج انقلاب سے پہلے والے حج اور برائ نام اسلامی ممالک کے حج سے بہت ہی متفاوت اور مختلف ہے انقلاب اسلامی کی کامیابی کے بعد والا حج ہی درحقیقت حج ابراہیمی ہے۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: اللہ تعالی کے فرمان کے مطابق مسلمانوں کا ایک خاص وقت میں خاص مقام پر جمع ہونے کے مختلف پیغامات ہیں  جن میں امت مسلمہ کی اجتماعی طاقت اور قدرت کو پیش کرنا اور باہمی اتحاد جیسے پیغامات بھی شامل ہیں اس کے علاوہ حج کا معنوی پہلو بھی بڑا اہم ہے اور حج کو حقیقی معنی میں منعقد کرنے کے سلسلے میں اہم اقدامات اور دیگر ممالک کے مسلمانوں کے ساتھ قریبی تعلقات  بہت ضروری ہیں۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: حج شبہات کو دور کرنے کا بہترین ذریعہ ہے ۔ حج میں ایران اور دیگر اسلامی ممالک کے درمیان تعلقات کو قوی کرنے کے مواقع فراہم کئے جاسکتے ہیں۔ حج عالم اسلام کی ظاہری اور معنوی طاقت اور قدرت کا مظہر ہے ۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: سعودی حکومت، پیغمبر اسلام (ص)  کے دور کے اسلامی آثار کو یکے بعد دیگرے مٹانے پر کمر بستہ ہے اور اسے اسلامی آثار کو محو کرنے سے روکنے کے لئے عالم اسلام کو متحدہ طور پر سنجیدہ اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔

News Code 1884437

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 16 =