امریکہ نےدبئی کو دہشت گردوں ، منی لانڈرنگ اور منشیات کے اسمگلروں کی جنت قراردیدیا

امریکہ کے مرکز برائ دفاعی مطالعہ کی جانب سے جاری رکدہ رپورٹ کے مطابق دہشتگردوں کے مالی سہولت کار، جنگ سے فائدہ اٹھانے والے اور منشیات اسمگلرز اپنے اثاثوں کے لیے دبئی کی ریئل اسٹیٹ مارکیٹ کو جنت کی طرح استعمال کرتے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ کے مرکز برائ دفاعی مطالعہ کی جانب سے جاری رکدہ رپورٹ کے مطابق دہشتگردوں کے مالی سہولت کار، جنگ سے فائدہ اٹھانے والے اور منشیات اسمگلرز اپنے اثاثوں کے لیے دبئی کی ریئل اسٹیٹ مارکیٹ کو جنت کی طرح استعمال کرتے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق واشنگٹن سے تعلق رکنے والے مرکز برائے دفاعی مطالعہ کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں اس بات کا الزام لگایا گیا ہے کہ دبئی جرائم پیشہ اور دہشت گرد افراد کے اثاثوں کیلئے جنت ہے۔ رپورٹ میں متحدہ عرب امارات میں اپارٹمنٹ اور ولاس میں 10 کروڑ ڈالر کی مشکوک خریداری کی نشاندہی کی گئی ہے۔ رپورٹ میں اس بات پر سوال اٹھایا گیا کہ ایک طرف ان جائیدادوں میں مصنوعی طور پر بنائے گئے جزیرے پام جمیرہ میں لاکھوں ڈالر کے ویلاس اور دنیا کی بلند ترین عمارت برج خلیفہ میں اپارٹمںٹ شامل ہے تو دوسری طرف دیگر لوگ یو اے ای کے سب سے بڑے شہر دبئی میں سستے ترین علاقے میں ایک بیڈ روم کے اپارٹمنٹ میں رہتے ہیں۔

اس کے علاوہ رپورٹ میں اس بات کی بھی نشاندہی کی گئی پاکستان سے تعلق رکھنے اور مبینہ طور پر منشیات اسمگلرز اور القاعدہ جیسے عسکریت پسند گروہوں کو اپنے کرنسی ایکسینج ہاؤس سے رقوم فراہم کرنے والے الطاف خانانی منی لانڈرنگ ادارے سے منسلک چند افراد اب بھی دبئی ریئل اسٹیٹ میں 2 کروڑ 10 لاکھ ڈالر رکھے ہوئے ہیں۔

News Code 1881389

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 7 =