فلسطین اور بیت المقدس کی آزادی امت مسلمہ کے تعاون کے بغیر ممکن نہیں

حزب اللہ لبنان کی سیاسی کونسل کے رکن نےفلسطین کے بارے میں امت مسلمہ کی اہم اور تاریخی ذمہ داری کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ فلسطین اور بیت المقدس کی آزادی امت مسلمہ کے تعاون کے بغیر ممکن نہیں ۔

مہر خبررساں ایجنسی کے بین الاقوامی امور کے نامہ نگار کے ساتھ گفتگو میں حزب اللہ لبنان کی سیاسی کونسل کے رکن حسن حب اللہ نے فلسطین کے بارے میں امت مسلمہ کی اہم اور تاریخی ذمہ داری کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ فلسطین اور بیت المقدس کی آزادی امت مسلمہ کے تعاون کے بغیر ممکن نہیں۔

حسن حب اللہ نے دنیا بھر میں عالمی یوم قدس کے موقع پر ریلیوں کے بارے میں مہر نیوز کے نامہ نگار کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ حضرت امام خمینی رضوان اللہ تعالی نے رمضان المبارک کے آخری جمعہ کو یوم قدس کے نام سے موسوم کرکے مسئلہ فلسطین کو ہمیشہ کے لئے زندہ جاوید بنادیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ یوم قدس کے موقع پر پوری دنیا فلسطینی عوام کے ساتھ اتحاد اور یکجہتی کا اظہار کرتی ہے ۔ حضرت امام خمینی (رہ) نے یوم قدس کے ذریعہ پوری دنیا کو فلسطین کے ساتھ جوڑ دیا ہے۔

حسن حب اللہ نے ایران ، حضرت امام خمینی (رہ) اور رہبر معظم انقلاب اسلامی کی طرف سے فلسطین کی حمایت کے بارے میں مہر نیوز کے نامہ نگار کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ حضرت امام خمینی (رہ) کی انقلاب اسلامی کی کامیابی سے پہلے بھی فلسطین پر گہری توجہ تھی اور اسی وجہ سے فلسطینی کی حمایت اور امداد رسانی میں ان کامؤقف مضبوط اورمستحکم تھا۔ حسن حب اللہ نے کہا کہ رہبر معظم انقلاب اسلامی بھی حضرت امام خمینی (رہ) کی راہ پر گامزن ہیں اور وہ آشکارا فلسطینیوں کی حمایت کررہے ہیں۔ حسن حب اللہ نے کہا کہ ایران اسلامی، انسانی اور اخلاقی بنیادوں پر فلسطینی عوام کی مدد کررہا ہے۔ اس نے کہا کہ اگر ایران کی طرح دوسرے اسلامی ممالک بھی کھل کر فلسطین کی حمایت کریں اور امریکہ و اسرائیل  کے ساتھ سفارتی ، اقتصادی اور سیاسی تعلقات ختم کردیں تو مسئلہ فلسطین بہت جلد حل ہوجائے گا۔

اس نے کہا کہ بعض اسلامی ممالک کے حکمراں مسئلہ فلسطین کے ساتھ آشکارا خیانت کررہے ہیں جن میں سعودی عرب کے حکمراں سر فہرست ہیں۔

حسن حب اللہ نے بیت المقدس کی آزادی کے سلسلے میں امت مسلمہ کے درمیان اتحاد کو اہم قراردیتے ہوئے کہا کہ امت مسلمہ کے باہمی تعاون کے بغیر بیت المقدس اور فلسطین کی آزادی ممکن نہیں۔

News Code 1881264

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 4 =