پاکستان میں بلوچستان کے قم پست رہنما گرفتار

خبر آئی ڈی: 4094584 -
پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے سابق وزیر داخلہ اور قوم پرست رہنما نوابزادہ گزین مری کو 18 سال بعد وطن واپسی پر ایئرپورٹ سے ہی گرفتار کرلیا گیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکسپریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے سابق وزیر داخلہ اور قوم پرست رہنما نوابزادہ گزین مری کو 18 سال بعد وطن واپسی پر ایئرپورٹ سے ہی گرفتار کرلیا گیا۔ اطلاعات کے مطابق نواب خیربخش مری کے بیٹے نوابزادہ گزین مری 18 سالہ جلاوطنی کے بعد شارجہ سے کوئٹہ پہنچے تو ان کے استقبال کے لئے مری قبائل کے افراد ایئرپورٹ کے باہر موجود تھے لیکن انہیں ہوائی اڈے کی عمارت کے اندرہی سے حراست میں لے لیا گیا۔نوابزادہ گزین مری کے وکیل ارباب محمد طاہر ایڈووکیٹ نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ فورسز اورنامعلوم افراد نے نوابزادہ گزین مری کو گرفتار کرلیا اورنامعلوم مقام کی طرف لے گئے، ہم نے ضمانت حاصل کررکھی تھی، اپنے آئندہ لائحہ عمل کا اعلان  نوابزادہ گزین مری کے خاندانی ذرائع سے رابطہ کرکے کریں گے۔ واضح رہے کہ گزین مری نامور بلوچ قوم پرست رہنما نواب خیر بخش مری کے صابزادے اور موجودہ رکن صوبائی اسمبلی چنگیز مری کے بھائی ہیں، اس کے علاوہ جبکہ لندن میں رہائش اختیار کئے نوابزادہ حیر بیار مری بھی ان کے چھوٹے بھائی ہیں۔ وہ نواز شریف کے دوسرے دور اقتدار میں بلوچستان کے وزیر داخلہ بھی رہ چکے ہیں، نوابزادہ گزین مری  پر بلوچستان ہائی کورٹ کے جسٹس نواز مری کے قتل سمیت کئی مقدمات درج ہیں۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

2 + 3 =